مرکز دو ہفتوں میں سیول سروس امتحان پر غور کرے: سپریم کورٹ


حکومت نے یہ خدشہ ظاہر کیا ہے کہ امتحان کے لیے اضافی موقع ملنے پر ملک بھر کے دیگر امتحانات کے لیے بھی ایسا ہی مطالبہ کیا جا سکتا ہے۔

فائل تصویر یو این آئی
فائل تصویر یو این آئی
user

Engagement: 0

سپریم کورٹ نے جمعرات کو مرکزی حکومت سے کہا کہ وہ امیدواروں کو اضافی کوششوں کی اجازت دے جو کووڈ-19 کی وجہ سے اس سال جنوری میں ہونے والے سیول سروسز (مین) امتحان میں شریک نہیں ہوسکے تھے۔

جسٹس اے۔ ایم کھانولکر کی سربراہی والی بنچ نے حکومت سے کہا کہ وہ کووڈ-19 کو مدنظر رکھتے ہوئے پارلیمانی کمیٹی کی سفارشات کے پیش نظر اضافی موقع دینے پر غور کرے۔ درخواست گزاروں نے سماعت کے دوران عدالت سے استدعا کرتے ہوئے کہا کہ کمیٹی نے وبا سے متاثرہ امیدواروں کو اضافی موقع دینے کی سفارش کی تھی۔

30 مارچ کو سپریم کورٹ کے سامنے پچھلی سماعت میں مرکزی حکومت نے کہا تھا کہ امتحان کے لیے اضافی موقع دینا ممکن نہیں ہے۔مرکزی حکومت کے محکمہ عملہ اور تربیت نے سپریم کورٹ میں اپنے تحریری جواب میں کہا تھا کہ اس معاملے پر غور کیا گیا ہے۔ سول سروسز امتحان کے عمل سے متعلق کوششوں کی تعداد اور عمر کی حد سے متعلق موجودہ دفعات کو تبدیل کرنا ممکن نہیں ہے۔

حکومت نے یہ خدشہ بھی ظاہر کیا تھا کہ امتحان کے لیے اضافی موقع ملنے پر ملک بھر کے دیگر امتحانات کے لیے بھی ایسا ہی مطالبہ کیا جا سکتا ہے۔محکمہ نے یہ بھی کہا تھا کہ اس امتحان میں نرمی دینے سے موجودہ امتحان میں اہل امیدواروں کے منتخب ہونے کے امکانات متاثر ہوں گے۔مرکز نے سپریم کورٹ کو بتایا تھا کہ سول سروسز مین (تحریری) امتحان 2021 کا انعقاد یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی)نے 7 جنوری سے 16 جنوری 2022 تک ملک بھر کے 24 مراکز پر کووڈ پروٹوکول کے بعد کیا تھا۔ کامیابی کے ساتھ منعقد کیے گئے اس امتحان میں کووڈ سے متاثرہ امیدواروں کے لیے کوئی علیحدہ انتظام کرنے کا حکم نہیں دیا گیا تھا۔

عرضی گزاروں نے عدالت عظمیٰ سے اپیل کی ہے کہ وہ یونین پبلک سروس کمیشن کو حکم دے کہ وہ کووڈ-19 سے متاثرہ امیدواروں کو امتحان کے لیے اضافی موقع دینے کی ہدایت کرے۔ابتدائی امتحان پاس کرنے والے تین امیدواروں نے اضافی موقع کی درخواست کی تھی۔

قومی آواز اب ٹیلی گرام پر بھی دستیاب ہے۔ ہمارے چینل ([email protected]) کو جوائن کرنے کے لئے یہاں کلک کریں اور تازہ ترین خبروں سے اپ ڈیٹ رہیں۔




Source link

(Visited 3 times, 1 visits today)
Share this...
Share on Facebook
Facebook
0Tweet about this on Twitter
Twitter
0 0 votes
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments