نوری آباد پاور پلانٹ ریفرنس، مراد علی شاہ پر فرد جرم دسویں بار مؤخر


نوری آباد پاور پلانٹ ریفرنس، مراد علی شاہ پر فرد جرم دسویں بار مؤخر

اسلام آباد کی احتساب عدالت میں جعلی اکاؤنٹس کیس میں نوری آباد پاور پلانٹ ریفرنس کی سماعت کے دوران وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ پر فرد جرم دسویں بار مؤخر کردی گئی، مراد علی شاہ کے شریک 2 نئے ملزمان نے بریت کی درخواستیں دائر کر دیں۔

احتساب عدالت کے جج سید اصغر علی نے جعلی اکاؤنٹس کیس میں نوری آباد پاور پلانٹ ریفرنس کی سماعت کی ۔

کیس کی سماعت کے دوران نیب نے کہا کہ پہلے سے دائر 6 ملزمان کی بریت کی درخواستوں کا جواب دے دیا ہے۔

جج سید اصغر علی نے کہاکہ آئندہ سماعت پر درخواستوں کا جواب اور دلائل دیں۔

اس کے بعد عدالت نے مراد علی شاہ کےخلاف نوری آباد پاور پلانٹ ریفرنس کی سماعت 30 مئی تک ملتوی کردی۔

وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ نے احتساب عدالت کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ نیب ریفرنس کی سماعت پر آیا تھا، عدالت نے پھر تاریخ دے دی ہے۔

مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ ایک پاور پلانٹ جو میرٹ آرڈرمیں سب سے اوپر ہے اور سستی بجلی دیتا ہے،یہ پلانٹ سستی بجلی دے رہا ہے جس سے کے الیکٹرک بجلی لیتی ہے۔

وزیراعلی سندھ کاکہنا تھا کہ یہ جھوٹا کیس ہے جس میں ملزمان کراچی سے ہرسماعت پر آتے ہیں، ہماری بجلی کے بحران کے حل کے لیے میٹنگز ہوئی ہیں، 6 سے7 ہزارمیگاواٹ بجلی اس لیےنہیں بنائی جارہی کہ پاور پلانٹس کوفیول نہیں ملا۔

انہوںنے کہا کہ پچھلی حکومت کے سارے دعوے غلط تھے،اب تجربہ کار ٹیم آئی ہے وہ اس کو دیکھے گی، یہ چیلنجنگ ٹاسک ہے کہ جو مسائل وہ چھوڑ کر گئے انہیں حل کرنا ہے۔

مراد علی شاہ کاکہنا تھا کہ وہ جھوٹے کیس میں پیشی کے لیے اسلام آباد آئے ہیں۔





Source link

(Visited 7 times, 1 visits today)
Share this...
Share on Facebook
Facebook
0Tweet about this on Twitter
Twitter
0 0 votes
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments