پولیس نے یاسمین راشد، شفقت محمود اور دیگر کو بے قرار دیدیا


—فائل فوٹو

لاہور کی پینگائی حمایتِ گردی کی عدالت میں ٹی آئی کے سربراہ کے خلاف لا مارچ کے دوران پھوڑ پھوڑ کے کیس میں پولیس نے جمع کرائی رپورٹ میں یاسمین راشد، شفقت محمود دیگر کو بے قرار دے دیا۔

پی ٹی آئی مسٹر کی ضمانت کی درخواستوں پر لاہور کی مسلماِ بالا گردی کی عدالت میں عدالت میں ڈاکٹر یاسمین راشد، شفقت محمود، میاں اسلم، محمود الرشید اقبال، عندلیب عباس اور جمشید چیمہ پیش کریں۔

پی ٹی آئی آئی کے سربراہ کے خلاف لانگ مارچ کے دوران پھوڑے پھوڑے کے مقدمے درج ہیں، جن پر تحریکِ انصاف کے 14 سربراہ نے ضمانت کے لیے عدالت سے رجوع کیا ہے۔

پولیس نے رپورٹ عدالت میں جمع کرادی جس میں یاسمین راشد، شفقت محمود دیگر پی ٹی آئی سربراہ کو بے قرار دیا گیا اور مقدمے میں مظلوم گردی کی حد تک ختم کر دی گئی۔

پولیس کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پولیس کی تلاشی مطلوب ہے۔

پولیس کی رپورٹ پر آئی ٹی کے سربراہ نے ضمانت کی درخواستیں واپس لے لیں۔

پی ٹی آئی سربراہ پر تھانہ شفیق آباد، شاہدرہ، گلبرگ اور بھاٹی گیٹ میں مقدمات درج ہیں۔

ڈاکٹر یاسمین راشد نے مولانا بعد ازاں گردی کی عدالت سے باہر میڈیا سے گفتگو کے دوران کہا کہ آج ثابت ہو گیا کہ ہمارے خلاف مناظرے پیش کیے گئے۔

ان کا یہ بھی کہنا ہے کہ پچھلی ایم پی ایز پر دہشت گردی کی حکومت نے ہمارے سیاسی بنیادوں کے تحت مقدمات پر بحث کی ہے۔





Source link

(Visited 5 times, 1 visits today)
Share this...
Share on Facebook
Facebook
0Tweet about this on Twitter
Twitter
0 0 votes
Article Rating
Subscribe
Notify of
guest
0 Comments
Inline Feedbacks
View all comments